72

شاپر ڈبل کرالو۔

کبھی کسی فروٹ یا سبزی کی ریڑھی پر خریداری کرتے وقت آپکو ایسا اتفاق ھوا ھوگا کہ پاس کھڑا کوئی اجنبی شخص آپکو یا اس ریڑھی والے کو مشورہ دے ڈالے گا کہ بھائی جی شاپر ڈبل کرالو کہیں یہ والا پھٹ نہ جائے اور آپکا فروٹ یا سبزی  گر نہ جائے۔۔۔

قطع نظر اس سے کہ وہ بیچارہ آپکا بھلا ہی سوچتا ھے یہ ایک فعل من حیث القوم ہمارے ایک دلچسپ روئیے کی طرف بھی اشارہ کرتا ھے۔۔۔پنجابی تھوڑی بد تمیز زبان ھے مگر کچھ باتوں کا اصل مطلب پنجابی میں ہی سمجھ آتا ھے جیسے کہ پنجابی گالی میں ایسی تاثیر ہوتی ھے کہ بقول شاعر روح تک بات اتر جاتی ھے مسیحائی کی۔۔۔اب اس شاپر ڈبل کرالو والی کیفیت کو اگر پنجابی میں نام دینا چاہیں تو اسے کسی بھی غیر متعلقہ کام میں ماما بننا کہہ سکتے ہیں۔۔۔اب پنجابی دوست اسے بہت بہتر سمجھتے ہیں کہ ماما بننا کیا ہوتا ہے۔۔۔ ہماری قوم اکثر و بیشتر اس جذبے یا کیفیت میں مبتلا نظر آتی ہے جو بادئ نظر میں تو بھلائی، اسلامی اخوت اور بھائی چارہ نظر آتا ھے لیکن اصل میں ہوتا وہ ماما بننا ہی ہے۔۔۔
اب آپ موٹر سائیکل پر گھر سے نکلیں تو کائنات کے ہر ذی روح کی نظر آپکی بائیک کے سٹینڈ پر ہو گی۔۔۔ہر طرف سے آوازیں سننے کو ملیں گی کہ او پائی سٹینڈ چک لے۔۔۔بھائی سٹینڈ اٹھا لیں وغیرہ وغیرہ۔۔۔جب تک آپ سٹینڈ نہیں اٹھائنگے سب کا کارخانہ حیات تب تک جام رہے گا۔۔۔اپنا کام چھوڑ کر آپکی فکر میں لوگ آپکو صلاح دیتے ہیں۔۔ یقینا یہ آجکل کے نفسا نفسی کے دور میں بہت خوش کن احساس ہے۔۔۔ایسے ہی جب آپ بائیک یا گاڑی میں کسی زنانہ سواری کے ساتھ نکلیں اور موصوفہ کا آنچل لہراتا نظر آجائے تو کونوں کھدروں سے برادران اسلام نمودار ہوجاتے ہیں کی باجی دوپٹہ اٹھا لیں، آپی کپڑے بچائیں وغیرو وغیرہ۔۔۔
بہت اچھا اور اپنائیت بھرا احساس ہوتا ھے فخر ھوتا ھے کہ کیسی دردِ دل والی قوم کے باسی ہیں جو اتنا احساس کرتے ہیں لیکن مسئلہ تو تب بنتا ہے کہ جب یہی قوم ایک ایک روپے کے لیے گلا تک کاٹنے پر تیار ہوجاتی ہے۔۔۔راستہ نہ ملنے پر گالیوں سے نوازتی ھے۔۔۔تب اس قوم کا بلکل ہی الگ روپ سامنے آتا ھے کہ اک منٹ کے لیے بھی برداشت نہیں۔۔۔ شائد سارا اخلاق صرف موٹر بائیک کے سٹینڈ یا عورت کے دوپٹے کو ٹائر میں پھنسنے سے بچانے پر ہی صرف ہوجاتا ہے۔۔۔ پھر وہ کیفیت یاد آتی ہے شاپر ڈبل کرالو۔۔۔ بلاوجہ غیر ضروری کام کا ماما بننا۔۔۔ آپ کو بھی کبھی ایسے کردار سے پالا تو پڑا ھوگا جو راہ چلتے ہی ہر واقف نا واقف کو مفت مشوروں سے فی سبیل اللہ نوازا جاتا ہو۔۔۔ کبھی غور کیجیےگا کہ ہم بھی تو اس میں شامل نہیں؟؟؟ 
کیا قوم ھے واللہ مجھے یقین ھے ایسی قوم اس کرہ ارضی پر تو اور کوئی نہ ھوگی باقی رب کی کائنات بہت وسیع ھے شاید کسی اور سیارے میں شاپر ڈبل کرالو کی صدائیں آتی ہوں۔۔۔ پاکستان زندہ باد

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں