99

میں کمرے میں گئی تو عمران خان وہاں ننگے لیٹے یہ کام کر رہے تھے. . . . . . ریحام کے گھٹیا الزامات

ہمارے معاشرے میں اگر کسی عورت کو بدقسمتی سے طلاق ہو جائے تو وہ اپنی عزت برقرار رکھنے کی خاطر چپ سادھ لیتی ہے، اگر خدا ناخواستہ دوسری دفعہ طلاق ہو جائے تو لوگ طرح طرح کی باتیں بناتے ہیں، اور عورت بچاری کا جینا حرام ہو جاتا ہے۔

ریحام کی جب پہلی طلاق ہوئی تو اسکا پہلا خاوند چیخ چیخ کر اسکی اس پر گندے الزامات لگاتا رہا اور محترمہ جواباً اس پر گندے الزامات لگاتی رہی۔ جب اسے دوسری دفعہ طلاق ہوئی تو خاوند نے چپ سادھ لی اور ریحام نے گندے الزامات لگانے شروع کر دئیے اور اب پورن فلموں کی طرح کتاب لکھ دی ہے۔ اسکی گندی کتاب کا اندازہ اس واقعہ سے لگا سکتے ہیں، جو اس نے اپنی کتاب میں لکھا ہے، ریحام اپنی کتاب میں لکھتی ہیں:

میری شادی کو چند دن ہی ہوئے تھے اور ابھی اسے خفیہ رکھا جا رہا تھا۔ ایسے میں ایک روز میں بنی گالا گئی اور عمران خان کے کمرے میں داخل ہوئی تو وہ ننگے ایک سفید چادر پر لیٹے اپنے پورے جسم پر کالی دال مَل رہے تھے۔ میں یہ دیکھ کر دم بخود رہ گئی۔ وہ مجھے اپنے سامنے دیکھ کرکھسیانی ہنسی ہنسنے لگے اور دال اپنے عضو مخصوصہ پر رگڑنی شروع کر دی۔ پھر وہ کھڑے ہوگئے اور جسم سے دال جھاڑتے ہوئے اپنے ملازم انورزیب کو آواز دی تاکہ وہ چادر اور دال اٹھا کر لے جائے۔ جب میں نے اس عجیب و غریب کام کے متعلق عمران خان سے پوچھا تو اس نے بتایا کہ احد (عمران خان کا برادرِ نسبتی) ایک شخص کو میرے پاس لے کر آیا تھا جس نے بتایا کہ مجھ پر کسی نے کالا جادو کیا ہے۔ اسی نے جادو کو ختم کرنے کے لیے جسم پر کالی دال مَلنے کو کہا تھا۔ میری اور عمران کی شادی کو چونکہ ابھی چند دن ہی ہوئے تھے لہٰذا میں اس مضحکہ خیز صورتحال پر زیادہ سختی سے اپناموقف نہیں دے سکی اور اس سے بحث نہیں کی۔

جو لوگ ریحام کی اس کتاب کی وکالت کر رہے ہیں ان سے گذارش ہے کہ اس کتاب کا اردو ترجمہ کر کے اپنے گھر میں اپنی بہن بیٹیوں، جو کہ ہماری بھی بہن بیٹیاں ہی ہیں، انہیں پڑھوائیں، اگر وہ اس کتاب کو اچھا سمجھیں تو پھر اسکی وکالت بھی کر لیں میری نظر میں جو کچھ اس کتاب میں لکھا گیا ہے وہ کسی شریف زادی کو لکھنا زیب نہیں دیتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں