Header Ads

ہیڈنگز لوڈ ہو رہیں ہیں...




خادم رضوی ،افضل قادری سمیت تحریک لبیک کی بڑی لیڈرشپ 20 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے


انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے اشتعال انگیز اور قومی اداروں کیخلاف تقاریر اور احتجاجی مظاہروں میں سرکاری املاک کی توڑ پھوڑ کیس میں تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ خادم رضوی اور پیر افضل قادری سمیت 4ملزموں کو 20دن کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے ایڈمن جج شیخ سجاد نے کیس پر سماعت کی۔ پولیس کی جانب سے خادم رضوی، پیر افضل قادری، اعجاز اشرفی اور فاروق الحسن کو سنٹرل جیل کوٹ لکھپت اور سنٹرل جیل گوجرانوالہ سے لاکر انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا۔

ملزموں کو تھانہ سول لائن لاہور میں پولیس کی مدعیت میں درج مقدمے میں عدالت میں پیش کیا گیا۔خادم رضوی کی پیشی کے وقت انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت کے اطراف میں سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کیے گئے تھے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے اضافی نفری تعینات کی گئی تھی۔عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد ملزموں کو 20 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.