64

اچھی سوچ کامیاب زندگی کی سیڑھی ہے

آئین سٹائن نے کہا تھا ہر شخص ذہین اور عقل مند ہے. لیکن اگر آپ مچھلی کی ذہانت کا معیار درخت پر چڑھنا بنا لیں تو وہ مچھلی زندگی بھر خود کو بے وقوف ہی سمجھے گی. انسانی دماغ اللہ رب العزت کا وہ شاہکار ہے جس میں ایک ہی مقام پر تخلیق تخیل تعمیر تجربہ اور تخریب و تباہی کو جمع کیا گیا اور اس کی بنیاد سوچ رکھ دی.

یہی سوچ ہے جو آپ کو بنا سکتی ہے بگاڑ سکتی ہے. یہی سوچ ہے جو جنگ کراتی ہے اور یہی سوچ امن بھی دے سکتی ہے. لیو ٹالسٹائی نے غالباً کہا تھا کہ اگر ہر فرد اپنی سزا کیلئے لڑے تو دُنیا میں امن آجائے گا. لیکن چونکہ دُنیا میں دوسروں کو سزا دینے کیلئے لڑا جاتا ہے تو امن خواب بن گیا ہے.

کچھ لوگ کہتے ہیں. باتوں میں کیا رکھا ہے. لیکن یہی باتیں ہی ہیں جو سوچ بناتی ہیں. اور یہی سوچ ہے جو پھر کسی فرد و معاشرے کی شکل بنتی ہے. قرآن شریف سورۃ البقرة آیت ٢٦٣ میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں. قَوۡلٌ مَّعۡرُوۡفٌ وَّمَغۡفِرَةٌ خَيۡرٌ مِّنۡ صَدَقَةٍ يَّتۡبَعُهَاۤ اَذًى‌ؕ وَاللّٰهُ غَنِىٌّ حَلِيۡمٌ ۞بھلی بات کہہ دینا اور درگزر کرنا اس صدقے سے بہتر ہے جس کے بعد کوئی تکلیف پہنچائی جائے اور اللہ بڑا بےنیاز، بہت بردبار ہے۔

اظہار خیال کے اس فورم کو اچھی اور بھلی بات کہنے کا اپنی سوچ کا ہاٹ سپاٹ بنائیں. یہی اظہار کا وہ صدقہ ہے جس پر کم از کم کسی کو ذہنی تکلیف تو نہیں ملتی. البتہ کسی کی سوچ بدل گئی تو وہ فرد بدل جائے گا.

ریاض علی خٹک

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں