نمک حرام افغانیوں کا سویڈن میں پاکستانی سفارت خانے کے سامنے نام نہاد مظاہرہ

گزشتہ روز مفاد پرست اور نام نہاد افغانیوں کے ایک ٹولے نے سٹاک ہوم میں پاکستانی سفارت خانے کے سامنے مظاہرہ کیا ہے جس میں نہ صرف پاکستان مردہ باد کے نعرے لگائے گئے ہیں بلکہ افغانستان کی تمام تر بربادی کا ذمہ دار بھی پاکستان کو ہی ٹھہرایا گیا ہے۔ مظاہرین نے پاکستانی حکومت پر افغان طالبان کی مدد کرنے کا نام نہاد الزام لگا کر طالبان کی موجودہ فتوحات کو پاکستانی سازش قرار دیا ہے، یہ نمک حرام اس حقیقت کو بھول گئے ہیں کہ 1979 میں افغانستان پر روسی حملے کے بعد سے انسانی تاریخ کا سب سے بڑا مہاجرین کا سیلاب پاکستان ہی آیا تھا جنہیں پاکستانیوں نے اپنے مسلمان بھائی بہنیں سمجھ کر انہیں نہ صرف اس وقت پناہ دی تھی بلکہ تیس لاکھ سے زیادہ افغانی آج بھی بدستور پاکستانی سرزمین پر جونکوں کی طرح ہمارے وسائل چوس رہے ہیں۔

ان بیوقوف اور غائب دماغ لوگوں کو اس بات کا ادراک نہیں ہے کہ انکی تباہی کا ذمہ دار پاکستان نہیں بلکہ روس اور امریکہ کے ساتھ ساتھ خود افغانی آپ ہیں۔ پاکستان نے انکی جنگ میں نہ صرف اپنے ستر ہزار سے زیادہ شہریوں کی جانیں گنوائی ہیں بلکہ اربوں ڈالرز کی اکانومی کا نقصان بھی کیا ہے۔ موجودہ افغان تنازعے میں نیوٹرل رہنے کا پاکستانی حکومت کا فیصلہ بہترین فیصلہ ہے، اس وقت افغان تنازعے کا واحد حل یہی ہے کہ تمام افغانی دھڑے مل بیٹھ کر اپنے فیصلے خود کریں اور ایک ایسی قومی حکومت تشکیل دیں جس میں تمام فریقین کی نمائندگی موجود ہو تاکہ افغانستان میں خانہ جنگی کا خاتمہ ہوسکے اور ہمسایہ ممالک بھی سکھ کا سانس لے کر اپنی اپنی اکانومی بہتر بنانے کیلئے مشترکہ اقدامات کرسکیں۔